Faqeer Sein


Born in a village in Sialkot, Pakistan; Faqeer Sein is a Petro-Physicist by profession. He has spent 34 years in the oil and gas industry. This includes tenures in the Middle East, Europe, North Africa and the Far East. He started writing Urdu Poetry in 2004. His poetry is mainly based on his observations of the world and the Muslim world in particular. A vehement opponent of all conspiracy theories, Faqeer Sein thinks that our predicament is entirely of our own doing. In his poetry, he touches upon topics such as corruption, extremism, violence, poverty, population and the environment.

You can find more about him on his website here.

BOOKS

Perils of Self-righteousness (Prose): Published by the Authorhouse, USA (2011)
اپنے گریبان کا سفر (Urdu poetry): Published by Mashal Books, Lahore (2011)


منتخب اردو کلام

مجھے شاعر نہیں کہیئے

مرے وطن میں تجھے

رات کی شکایت

ویتنام

گلزار کو جواب

غیرت اور بے غیرتی

پہلی محبت

خواب میں بلھے شاہ

توانائی کی پیمائش

تجسس اور یقیں

بے خبر مسافر

پچھلی سیٹوں کا مسافر

بھوت، طوطا اور شہزادہ

سرفراز شاہ کی یاد میں

خدا کی لاٹھی

اقبال در خواب

میں پریشان ھوں، حیران نہیں

خواب میں قائد

ھائے آبادی

مینڈک

لاڈلے بچے

شیر، بندر اور پائپ

جنگ ھماری ھے صاحب

دیوار کی ضرورت

مرے بچو

ڈور میں گنجل

آدھا بھرا گلاس

اپنی قوم کی باتیں

یہ ایٹم کی توانائی

غریبو! خدا یاد کرو

پَیروں کے ووٹ

پیشہ ہی تجاری ہونا

ہر سولہ دسمبر

جس نے بارود کی طرح ڈالی

عام شکوے

ایسی گھنٹی کا فائدہ

رشوتوں کی گھنٹی

بوکو حرام

جب گریبان میں جھانکتا ہوں

میں نے سیکھا ہے یہ پڑھائی میں

معجزہ حب الوطنی

گرین کارڈ

میری مختصر کہانی

مجھے کس بات کا غم ہے

دھماکے

برائے صبین محمود

بحر قلزم میں ڈبونے والوں کے نام

یوم مئی

ہند و قلزم کے نوالے

قائد حق شناس

تاریخ میں تفریق


منتخب پنجابی کلام

پٹھی دا ڈبن

 ڈور وچ گنجلاں